اے کاش محض تو انسان نہ ہوتا

Poet: Usaid-Ur-Rehman
By: Usaid, Rahimyarkhan

آؤ تمھیں انسان کا مطلب میں بتاؤں
لیتے ہوۓ ہر سانس کا مطلب میں بتاؤں

غلطی نۃ کرے ، ممکن نہیں انساں ہو وہ
مشکل میں نہ آۓ ، ممکن نہیں انساں ہو وہ

غلطی سے سنورنے کو ہی انساں کہتے
مشکل میں سنبھلنے کو ہی انساں کہتے

ہو وفا جس میں اسی كو انسان کہو
بے وفا ہو تو محض حیوان کہو

احسان نہ کرے گا, تو انسان ہو گا کیسے
گلاب خوشبو کے بنا بادشاہ ہو گا کیسے

مقصد ہی آنے کا اگر بھول گیا تُو
کس غرض سے اشرف تو کہلاۓگا

ایمان سے خالی جو مر گیا تُو
اپنے رب كو کیا منہ دکھلاۓ گا

اے کاش محض تو انسان نہ ہوتا
مسلماں ہوتا تو کبھی پَریشان نہ ہوتا

Rate it:
22 Jun, 2020

More Life Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Usaid
Visit 7 Other Poetries by Usaid »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City