بتاتی ہیں دل کا حال ہماری آنکھیں

Poet: Jamil Hashmi
By: Jamil Hashmi, Rawalpindi

بتاتی ہیں دل کا حال ہماری آنکھیں
بڑی پر نم ہو جاتی ہیں ہماری آنکھیں

نہیں ہے خبر اسے ہمارے غموں کی
آنسو بہاتی رہتی ہیں ہماری آنکھیں

اس کا ذکر آتے ہی ہونٹوں پر
غمناک ہو جاتی ہیں ہماری آنکھیں

محفوظ کر لیا ہے اسے نظروں نے
اس کا عکس دیکھاتی ہیں ہماری آنکھیں

کہا تھا اس نے ہمیں بھول جانا
یہ بات یاد کراتی ہیں ہماری آنکھیں

Rate it:
09 May, 2013

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: Jamil Hashmi
Working in one of reputed Educational Institution.
[email protected]
.. View More
Visit 481 Other Poetries by Jamil Hashmi »

Reviews & Comments

جمیل
آپ نے آنکھوں کے بارے میں بہت خوبصورت انداز میں اظہار خیال کیا ہے۔
سچ کہا آپ نے۔آنکھیں انسانی جسم میں ایک اہم تریں مقام کی حامل
ہیں اور آنکھوں کے بغیر زندگی بے رنگ اور اندھیری رات جیسی ہے۔۔۔۔۔۔
آنکھیں برستی ہیں تو ساون کو بھی مات دے دیتی ہیں۔دکھ جب حد سے
بڑھ جاتا ہے تو آنکھیں چھلک اٹھتی ہیں اور سارا درد اشکوں سے دھو دیتی
ہیں اور انسان کا من ہلکا ہو جاتا ہے۔
آنکھوں کے ذاوئیے بدلنے سے انسان کی کیفیات کا اندازہ ہوتا رہتا ہے۔۔۔۔۔۔۔
جیسے جھکیں تو حیا
اٹھیں تو ادا
پھریں تو بے وفا
وغیرہ وغیرہ
بہت حسین انداز میں کلام تخلیق کیا ہے آپ نے۔
داد کے پھول
اور دعاؤں کے تازہ گلاب
حاضر ہیں۔

By: Azra Naz, Reading UK on May, 14 2013

Nouman brother your this comments are precious to me and I respect them....Thank you very much.....

By: jamil Hashmi, Rawalpindi on May, 13 2013

Jamil bahi very nice poetry heart touching ....... kerp writting

By: Arooj Fatima(Lucky), Jeddah on May, 12 2013

I am so thankful to you my sister Lucky.....be happy......
By: Jamil Hashmi, Rawalpindi on May, 13 2013

bout kub je dad le je

By: وشمہ خان وشمہ, pakistan on May, 12 2013

Washma I am so thankful to you for your very nice comments....be happy......
By: Jamil Hashmi, Rawalpindi on May, 13 2013

ہمارے ایک دوست کہا کرتے تھے کہ آنکھیں
دل کے دروازے اور روح کی کھڑکیاں ہوتی ہیں
اور انسان کی اندرونی کیفیات کا عکس ہوتی
ہیں۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔میں نے اپنی ایک غزل میں شعر
کہا تھا
لبوں کا کام نگاہوں سے کیوں نہیں لیتے
اثر جو کر نہ سکے پھر وہ گفتگو کیسی

آپ نے ایسی ہی کچھ بات اپنی اس غزل غزالہ
میں کہی۔۔اور بہت اداس پیرائے میں دل کا حال
بیان کر دیا۔۔۔۔۔۔۔۔۔آپ کی یہ کاوش مجھے ہمیشہ
کی طرح بے حد پسند آئی۔۔۔اصغر بھائی کو
تو ایسے موقع پر خیالوں میں رس ملائی کھلایا
کرتا ہوں اب آپ کو کیا کھلاؤں ؟ چلیے میری طرف
سے ایک خیالی برفی کا ٹکڑا کھا لیجے اور ایسی
ہی ایک اور خوبصورت غزل لکھنے کی تیاری کیجیے

By: dr.zahid sheikh, lahore,pakistan on May, 12 2013

زاہد بھائی آنکھوں کی تعریف تو میں آپ سے بہتر نہیں کر سکتا لیکن آپ کی داد کے بعد
یوں لگا کہ شاید میری یہ کاوش رنگ لا چکی ہے کیونکہ آپ کی پشندیدگی میرے لئے بڑے
فخر کی بات ہے بہت شکریہ میری دعا ہے کہ اللہ تعالی آپ کو لمبی زندگی دے اور ہمیشہ
خوش رکھے آمین۔۔۔۔۔۔۔۔
By: Jamil Hashmi, Rawalpindi on May, 13 2013

wonderful poetry Jamil bhai.....asghr

By: asghar, birmminghm on May, 11 2013

Your comments are most welcome Asghar Bahi.....be happy........
By: Jamil Hashmi, Rawalpindi on May, 13 2013

very very niceee b happy alwys

By: maria ghouri, haroonabad on May, 10 2013

Thank you Maria.......be happy.......
By: Jamil Hashmi, Rawalpindi on May, 13 2013

Jamil bhai,
Ankhoon ka kam hmesha brasna hi hota hy.
ansoon to hmesha hi nikalty hy cahe wo kisi ke milny
ke hon ya pir.........
nehaiyt hi umda klam.....khush rhin.
Numan.

By: Numan Iqbal, Faislabad on May, 10 2013

Nouman brother your this comments are precious to me and I respect them....Thank you very much.....
By: Jamil Hashmi, Rawalpindi on May, 13 2013
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City