توقیرِ زات کی ، نیلامی نہیں ہوگی

Poet: اخلاق احمد خان
By: Akhlaq Ahmed Khan, Karachi

توقیرِ زات کی ، نیلامی نہیں ہوگی
اب ہم سے اور ، غلامی نہیں ہوگی

گردن میں خم ، لہجے میں عاجزی
جھک کر اس طرح ، سَلامی نہیں ہوگی

یہ جو کرتی پھرتی ہے اوروں کی عیب جوٸی
کیا اس زباں میں کوٸی ، خامی نہیں ہوگی

جس کے لۓ تو نے نظام کو چھیڑا
دیکھ وہی خلقت تیری ، حامی نہیں ہوگی

انحراف کر کے شاہ کے حکم سے
تو سمجھا کارواٸی ، انتقامی نہیں ہوگی

دھتکار کر مجھے تمہیں کیا لگا تھا
میسر اب مجھے کوٸی ، أسامی نہیں ہوگی

اخلاق زندگی میں اتنے ہنگامے سہے کہ اب
کوٸی بھی بات مجھ میں ، ہنگامی نہیں ہوگی

Rate it:
16 Oct, 2019

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Akhlaq Ahmed Khan
Visit 101 Other Poetries by Akhlaq Ahmed Khan »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City