خلاف امید

Poet: ماہم طاہر
By: Maham Tahir, Karachi

سر بلند جو کیا خالی فضا پائی ہے
جب بھی گلستاں میں گئے ہم خزاں پائی ہے

جس جرم کا سوچنے سے بھی ڈر لگتا تھا
ایسے جرم کی لاحق میں ہم نے سزا پائی ہے

دوسروں کو خوش دیکھنے کی چاہ کیاغلط تھی؟
انجام میں دل نے ہمیشہ عزا پائی ہے

کوئی زندگی برائی ہی میں نہ کیوں ڈبو ڈالے گا
آ خر میں تو حق نے ہی جزاء پائی ہے

اک بول غلط بیاں ہم کردیتے ہیں جو
سو اس وقت کی نماز پھر قضاء پائی ہے

چلیں کچھ لفظ آ پ بھی سوچ کر رکھ لیں
پر قلم نے تو ہماری ہی رضا پائی ہے

Rate it:
31 Mar, 2020

More Life Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Maham Tahir
Visit 13 Other Poetries by Maham Tahir »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City