ساتھ قدم ہیں تیرے مگر دل نہیں

Poet: Wajid Nabi
By: Wajid Nabi, Karachi

یوں ہی انجام اپنا سوچنے لگتے ہیں
اس شخص پر واجد مہرباں ہوتے ہوئے

ساتھ قدم ہیں تیرے مگر دل نہیں
سنساں ہیں راہیں تیرے ہوتے ہوئے

دعویٰ ہے چارہ گری کا چار سو مگر
سخت بیمار ہیں ہم دوا کے ہوتے ہوئے

دل و جاں کو بس اس کا دیدار چاہیے
وہ نا مہرباں ہے مہرباں ہوتے ہوئے

دلِ مظلوم وفا کی فریاد کرتا ہے
بہرحال بے زبان ہوتے ہوئے

بوجھ خوش نوازی کا اٹھا رہے ہیں
سرکشوں کے ہاتھوں ناتواں ہوتے ہوئے

Rate it:
18 Jan, 2020

More Life Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Wajid Nabi
Visit 16 Other Poetries by Wajid Nabi »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City