شام کے وقت چراغوں کا حوالہ بھی تو ہو

Poet:
By: وشمہ خان وشمہ, منیلا

شام کے وقت چراغوں کا حوالہ بھی تو ہو
دیدہء ترہوں کوئی دیکھنے والا بھی تو ہو

ایک امید مرے سپنے میں قائم ہے ابھی
تیرہ دنیا میں مھبت کا اجالا بھی تو ہو

میں اکیلی ہوں ترے بعد دیارِ جاں میں
تیری یادوں کا مرے واسطے ہالہ بھی تو ہو

میں تو حق بات کی قائل ہوں زمانے بھر میں
میرے ہونٹوں کے لیے ضبط کا تالا بھی تو ہو

ہر طرف چہرے نظر آتے ہیں مصنوعی مجھے
ان سفیدوں میں کوئی رنگ کا کالا بھی تو ہو

ہر سہولت تو ترے پاس ہے لیکن وشمہ
تیری قسمت میں یہ عزت کا نوالہ بھی تو ہو

Rate it:
30 Dec, 2020

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: وشمہ خان وشمہ
I am honest loyal.. View More
Visit 4713 Other Poetries by وشمہ خان وشمہ »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City