شبِ تاریک اک دیا اور میں

Poet: ڈاکٹر شاکرہ نندنی، ُُپرتگال
By: Dr. Shakira Nandini, Porto

شبِ تاریک اک دیا اور میں
وہی خوابوں کا سلسلہ اور میں

اتنی انجان رہ گزر کا سفر
کتنا ویران راستہ اور میں

رات بھر ساتھ ساتھ چلتے ہیں
تیری یادوں کا قافلہ اور میں

ذکر کچھ اس کی چال کا مت چھیڑ
مست ہو جائیں گے ہوا اور میں

خوب دونوں میں جنگ ہوتی ہے
جب مقابل ہوں آئنہ اور میں

گڑ گ ڑا کر دعائیں کرتا ہوں
جب ہوں تنہا، مرا خدا اور میں

کتنے مانوس ہو گئے ہیں ہم
گھر کی مہکی ہوئی فضا اور میں

Rate it:
02 Sep, 2020

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Dr. Shakira Nandini
I am settled in Portugal. My father was belong to Lahore, He was Migrated Muslim, formerly from Bangalore, India and my beloved (late) mother was con.. View More
Visit 320 Other Poetries by Dr. Shakira Nandini »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City