شہر ِآسیب پر چھائے ہیں وباؤں کے منظر

Poet: Dr. Syed Asad Hamdani
By: Dr. Asad Hussain Shah, Panjera, Kotli, Azad Jammu and Kashmir

Covid-19
شہر ِآسیب پر چھائے ہیں وباؤں کے منظر
اب مجھ کو بھاتے نہیں زرد سرسوں کے منظر

چھائے ہیں موت کے سائے چاروں طرف
شہر میں ہو کا عالم، ویران سڑکوں کے منظر

اب کے میری وادیوں میں اترا یاس کا موسم
دھند میں لپٹے ہوئے اداس پربتوں کے منظر

فلک پر تن گئے ہیں سیاہ بادلوں کے خیمے
زمیں کے مرقدپربکھرے پھولوں کے منظر

آسماں سے اتر رہیں ہیں اداس بارشیں
سرمئی آنکھوں میں سرخ آنسوؤں کے منظر

ہوس پرستوں کی نگاہ ہے سکوں کی چھنکار پر
مزدور کی آنکھوں میں روٹی کی حسرتوں کے منظر

اطالوی شاہراؤں پر لاریوں میں بھری لاشیں
شہرِ رومان پر چھائے ہیں وحشتوں کے منظر

جاری ہے
اسد۔ مارچ، ۳۱، ۰۲۰۲

Rate it:
31 Mar, 2020

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Dr. Asad Hussain Shah
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City