قیدی بیٹی

Poet: سعیداللہ سعید
By: Saeed ullah Saeed, Karachi

وہ قید میں جو اغیار کی ہے
اس بیٹی کو لائے گا تو کب؟

وہ عصمت کی آنکھوں کا ٹھنڈک
اسے یہ ٹھنڈک لوٹائے گا تو کب؟

فوزیہ سے کیا تھا جو وعدہ
وہ وعدہ نبھائے گا تو کب؟

احمد اور مریم سے صاحب
مما کو ملائے گا تو کب؟

سلیمان اور قاسم کی حیثیت
عافیہ کو دلائے گا تو کب؟

تم تھے تو بڑے ہمدرد اس کا
اس ہمدردی کو جتائے گا تو کب؟

وہ قید میں جو اغیار کی ہے
اس بیٹی کو لائے گا تو کب؟

Rate it:
06 Apr, 2020

More Political Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Saeed ullah Saeed
سعیداللہ سعید کا تعلق ضلع بٹگرام کے گاوں سکرگاہ بالا سے ہے۔ موصوف اردو کالم نگار ہے اور پشتو میں شاعری بھی کرتے ہیں۔ مختلف قومی اخبارات اور نیوز ویب س.. View More
Visit 2 Other Poetries by Saeed ullah Saeed »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City