لوٹ آؤ نہ

Poet: نیہا ثمن ملک
By: Nehamalik, Gujrat

سانسیں رک جاتی ہے تیرے نہ آنے سے
کچھ یاد نہیں رہتا تیرے نہ آنے سے
سنولوٹ آؤ نہ
میری طبیعت خراب رہتی ہے
کچھ حوش نہیں رہتا
میری سانس میں سانس آ جاتی ہے
میں جب تم کو دیکھ لیتی ہوں
سنو لوٹ آؤ نہ
جن راہوں پہ ملتے تھے ہم ہر روز
وہ راہیں مجھ سے سوال کرتی ہے
سنو لوٹ آؤ نہ
وہ چاند جس میں تم مجھ کو دیکھتے تھے
وہ چاند آجکل اداس رہتا ہے
سنو لوٹ آؤ نہ
وہ تجھ کو دیکھ کر میرے ہونٹ مسکرانے لگتے تھے
اب صدیوں سے خاموش رہنے لگےہے
سنو لوٹ آؤ نہ
آ جاؤ جب تک میں زندہ ہوں
پھر تو رو رو کے کہو گے
سنو لوٹ آؤ نہ

Rate it:
10 Jun, 2020

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Nehamalik
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City