محبت ہو نہیں سکتی

Poet: طارق اقبال حاوی
By: Tariq Iqbal Haavi, Lahore

رنجشیں بھول جاتے ہیں
دل کو صاف کرتے ہیں
تم جو آئے ہو چل کر
تو تم کو معاف کرتے ہیں
مگر یہ پھر سے مت کہنا
کہ ہر کفارہ بھر دو گے
ادھوری رہ گئی تھی جو
محبت پوری کر دو گے
میری مانو۔۔۔ پلٹ جاﺅ
یہاں اب کچھ نہیں حاصل
کہ اب کوئی اور ہو چُکا
میری ذات میں شامل
کسی کا مان ہوں میں اب
کسی کی جان ہوں میں اب
سنو۔۔۔ واپس پلٹ جاﺅ
یہ رغبت ہو نہیں سکتی
ہمدردی ہو تو سکتی ہے
محبت ہو نہیں سکتی

Rate it:
16 May, 2019

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: Tariq Iqbal Haavi
میں شاعر ہوں ایک عام سا۔۔۔
www.facebook.com/tariq.iqbal.haavi
.. View More
Visit 154 Other Poetries by Tariq Iqbal Haavi »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City