میں تیری محبت کو طلاق لکھ رہی ہوں

Poet: Muhammad Athar Tahir
By: Athar Tahir, Haroonabad

ہر اک خواہش ہر تمنا کو خاک لکھ رہی ہوں
میں تیری محبت کو طلاق لکھ رہی ہوں
صدیوں کی بے معنی رفاقت کا جنازه نکال کر
میں ہوں باغی محبت سے بے باک لکھ رہی ہوں
محبت کے نام پر ہیں یہ نامحرموں کے دھوکے
میں نسل نو کے واسطے اسباق لکھ رہی ہیں
خوش رنگ تتلیاں بے بال و پر ہیں کیوں کر
کلی ہوتی ہے آخر کیوں خس و خاشاک لکھ رہی ہوں
عصمت جو بچ سکے نہ کچھ رہتا نہیں باقی
میں جھوٹی لذتوں کو ناپاک لکھ رہی ہوں
میری بہنوں بچ کے رہنا نہ زندہ لاش ہونا
یہ معاشرہ ہے کتنا سفاک لکھ رہی ہوں

نوٹ: یہ غزل بہنوں کیلئے مؤنث صیغہ میں لکھی گئی ہے جبکہ تخلیق محمد اطہر طاہر کی ہے۔

Rate it:
07 Oct, 2019

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Athar Tahir
Visit 113 Other Poetries by Athar Tahir »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City