میں خالی ہاتھ تھی دیکھا نہیں، ہے کیا پہنا

Poet: Dr. Riaz Ahmed
By: Dr. Riaz Ahmed, Karachi.

میں خالی ہاتھ تھی دیکھا نہیں، ہے کیا پہنا
جو لایا پھول نہیں لائے گا وہ کیا گہنا

میرے بلانے پہ آواز بھی نہ پہچانی
گلے شکوؤں کا پھر اپنے لبوں سے کیا کہنا

جسے یہ شک ہے کہ نظریں بدل گئیں میری
پھر اُس کے سامنے اِن آنسوؤں کا کیا بہنا

جو لے قدم بھی نہ سماج کہیں اٹھ جائے
تو میرے واسطے اُس نے زمانہ کیا سہنا

مکیں کا سوچے بنا پھینکتا ہے دِل وہ ریاض
نہیں جو حقِ ملکیت ، تو گھر میں کیا رہنا

 

Rate it:
21 Oct, 2013

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: Dr. Riaz Ahmed
https://www.facebook.com/pages/BazmeRiaz/661579963854895
انسان کی تحریر اس کی پہچان ہوتی ہےاس لِنک کو وزٹ کرکے بھی آپ مجھ کو جان سکتے ہیں۔ویسےکراچی
.. View More
Visit 2155 Other Poetries by Dr. Riaz Ahmed »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City