نیند بھی اب ستا کے آتی ہے

Poet: ایمان
By: Eiman, rawalpindi

جب بھی آتی ہے مجھے رلا کے آتی یے
یے نیند بھی اب ستا کے آتی ہے

ایسا نہیں کہ اسکی ناراضگی کلیجے کا گھاؤنہیں
ہاتھ جوڑتی ہوں مگر کچھ حیا سی آتی ہے

آپکی یاد کا انتظار اب نہیں کرتی میں
وہ تو میرے پاس ہوتی ہے ,میں کیسے کہوں کب آتی ہے

ننھے ننھے ہاتھوں میں صدمہ عظیم ہے
میری تو سانس بھی لڑکھڑا کے آتی ہے

اور فرقت کا عرصہ اتنا لمبا ہوا کہ آنکھیں لٹ گئیں
وصل یار کے وقت یار نہیں آتا نظر جدائی آتی ہے

Rate it:
06 Jan, 2020

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Eiman
Visit 4 Other Poetries by Eiman »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City