وصال میں تیرے , فرقتوں کےغم بھی ہیں

Poet: زاہد
By: زاہد, karachi

وصال میں تیرے , فرقتوں کےغم بھی ہیں
کہ قربتیں بھی , ثانی فراق گزری ہیں

جفاؤں کا کوئی ،شکوہ ہی نہیں تم سے
وفائیں بھی تو تیری ، سَراب کی سی ہیں

مری رَوِش کی کیوں ہیں ، شکایتیں تم کو
مِرے رَویے میں ، عکس اب ، تِرے ہی ہیں

جو گھولا ، تم نے ، زہر زندگی میں ہے
یہ تلخیاں میرے لہجے ، میں اسی کی ہیں

جو سچ کہے زاہد ، لطف تو ہِجر میں ہے
وصال میں اس کے ، رَنجشیں ہی بڑھتی ہیں

 

Rate it:
09 Mar, 2020

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: زاہد
Visit Other Poetries by زاہد »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City