ٹھایا جو قدم راستہ بہت مشکل تھا۔

Poet: Maria Maqbool
By: Maria Maqbool, Lahore

اٹھایا جو قدم راستہ بہت مشکل تھا
منزل پر مگر پہنچنا بھی بہت ضروری تھا
جزبہ تھا لیکن پہاڑوں سے اونچا
سمندر کی گہرائیوں سے گہرا
بات وطن کی تھی اور اہل وفا میں آنا تھا
وطن کی بیٹی تھی اور یہ بھی ثابت کرنا تھا
میں آگے ہی آگے بڑھتی گئی اور رکاوٹیں پار کرتی گئی
راہ کے کانٹے چن چن کے ہٹاتی گئی
دعائیں جو مانگی تھی وہ رنگ لے آئیں
دل کی مرادیں بر آئیں
نصیبوں والوں کو ملتا ہے یہ اعزاز
نام جب آتا ہے وطن کا ساتھ

Rate it:
28 Jun, 2020

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Maria Maqbool
Visit 2 Other Poetries by Maria Maqbool »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City