کہیں ملے تو اس سے کہیو

Poet: MUBASHAR ABBAS
By: MUBASHAR ABBAS, ISLAMABAD

کہیں ملے تو اس سے کہیو
کہ
روۓ نہ ، اپنی پلکیں کسی کے غم میں بھگوئے نہ
یہ بھی کہنا کہ
وہ دیوانہ جو تری یاد میں اک زمانہ
درد سہتا رہا ہے جاناں
ہان وہ ہی دیوانہ
جو تیرا منتظر ہی رہا
اپنا حال سے بے خبر ہی رہا
جو اپنے بدن کی قبر میں گڑا ہی رہا
وہ چاندی کے کنگن بڑے شوق سے
اپنے ہاتھوں میں لے کر کھڑا ہی رہا

یہ سب کچھ بتا کر
اسے یہ بھی کہنا
وو پاگل ، مجنوں اب مر گیا ہے
یہ سب کچھ بتا کر
یہ سب کچھ سنا کر
ذرا غور کرنا
اگر وہ غمگین ہونے لگے تو
وہ بے اختیار رونے لگے تو
اسے اتنا کہنا
کہ اے جان جاناں روۓ نہ
اپنی پلکیں کسی کے غم میں بھگوئے نہ
 

Rate it:
10 Sep, 2020

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: MUBASHAR ABBAS
Visit 29 Other Poetries by MUBASHAR ABBAS »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City