ہمیں سجنا بھی کہاں پڑتا ہے

Poet: ایمان
By: Eiman, rawalpindi

ایسے ہی آگ روشن نہ ہوئ اس گھر کے چولہے کی
اس میں لکڑی نہیں میرا مان جلتا ہے

کونسی ہنسی اور کہاں کے قہقے
وہ جانا تھا گیا,گیا نیا دل اب کہاں بنتا ہے

اتنے تصدیعہ و گزند سے گزرے ہم
کہ اب حوصلہ آگے نہیں پاؤں پڑتا ہے

بکھری زلفیں ,خاموش ہونٹ سرخی میں لپٹے نین
سنورے سنوارے گئے ہم,اب ہمیں سجنابھی کہاں پڑتاہے

Rate it:
06 Jan, 2020

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Eiman
Visit 4 Other Poetries by Eiman »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City