ہم جو دوسروں کے لیے اپنی خوشیاں لُٹا دیں

Poet: Nisha Shahzadi
By: Nisha Shahzadi, Sialkot


ہم جو دوسروں کے لیے اپنی خوشیاں لُٹا دیں
کبھی اپنوں کے لیے
تو کبھی غیروں کے لیے
وہ اب پوچھتے ہیں کہ
ہمارے لیے کیا بھی تو کیا کیا
ہم تو ناداں تھے جو
دنیا خوش کرنے چلے تھے
ہم تو بھول ہی گے تھے کہ
ایک خوش تو دوسرا ناراض ہے
اب کی بار احساس ہوا کہ
کہ حساب کتاب ضروری ہے
ورنہ بعد میں لوگ بھول کر اگلے رستےچلتے ہیں
پھر سوچتا ہو کہ حساب کتاب ہی رکھنا تھا
تو یہ اپنے نہ ہوے
کیونکہ حساب کتاب تو غیروں سے رکھتے ہیں
اپنوں سے تو نہیں
لیکن سوچ یہ بھی آتی ہے کہ
کہ یہاں اپنا کوں ہے
سب تو پرائے بنے ہوئے ہے

Rate it:
24 Sep, 2020

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Nisha Shahzadi
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City