غم کا موسم بیت گیا سو رونا کیا

Poet: افضال فردوسBy: Rabi, Swat

غم کا موسم بیت گیا سو رونا کیا
کل کے غم کو آج کے دن میں بونا کیا

ٹھیک ہے ہم اک دوسرے کے محبوب نہیں
لیکن میرے دوست تو اب بھی ہونا کیا

اور بہت سے کام پڑے ہیں کرنے کے
اشکوں کے ست رنگے ہار پرونا کیا

جس کو میری حالت کا احساس نہیں
اس کو دل کا حال سنا کر رونا کیا

بے شک ساری رات کٹی ہے آنکھوں میں
اب اجیارا پھیل گیا تو سونا کیا

تم نے ہنستے ہنستے ناطہ توڑ لیا
لیکن سچ سچ بتلاؤ خوش ہونا کیا

Rate it:
Views: 195
27 Oct, 2021