تشنگی

Poet: Eisha-Tul-Razia(مسافر)
By: Eisha-Tul-Razia, GUJRAT

دھر اس تشنگی کا سبب ... تیرا نظریں چرانا ہے
پر تجھے کیا کہیں اب ہم.. کہ ترا کام ہی ستانا ہے

کبھی چائے.. کبھی سگریٹ.. لبوں سے میں لگاتا ہوں
اے ساقی جام دے.. کہ اب ، اس آتش کو بجھانا ہے

سوچا تھا کہ سہہ لو گے.. تو. سب کہنے لگا تم سے
سمجھایا اضطراب نے ترے،"کچھ باتوں کو چھپانا ہے

جہاں کی چمکتی کوئی ادا مجھ کو نہیں بھاتی
ضمیر!!! کوئی شعلہ دے ....مجھے یہ نفس جلانا ہے

مسافر اس سفر میں بھی تیرا مشغلہ وہی پرانا ہے
یعنی خود کو بنانا ہے، مٹانا اور مٹا کر پھر بنانا ہے

Rate it:
02 Apr, 2020

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Eisha-Tul-Razia
Visit Other Poetries by Eisha-Tul-Razia »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City