تم نہ جانا چندا

Poet: عباد راشد
By: عباد راشد, کراچی

 چاندنی راتوں کو جاگ کر کے
کھڑکی سے چاند کو تاک کر کے
کھو جاتے تھے تُجھ کو یاد کر کے
پھر سو جاتے تھے اک فریاد کر کے

خدا اک دن مجھے اُس سے مِلا دینا
جسے چاہا تھا خود کو برباد کر کے
جو بچھڑا تو یوں دل چاق کر کے
سارے عہد وفاؤں کو راکھ کر کے

خدا اس کی ہر خطا اس کو معاف ہے
بس ایک بار آ جائے وہ دہلیز پار کر کے
رہا وعدہ کہ میں خود کو مٹا دوں گا
اس کے قدموں میں خود کو خاک کر کے

میرے چاند میرے آنسوں پر گواہ ہو جا
سمندر بھر کر دریا بہا ہے اسے یاد کر کے
بھولے سے بھی کبھی اُس نے احوال نہ لیے
پر تم نہ جاناچندا تاریک راتیں ویران کر کے

Rate it:
14 Oct, 2020

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: عباد راشد
Visit Other Poetries by عباد راشد »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

well said

By: Darakhshanda, Huston on Oct, 18 2020

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City