Add Poetry

بارش کا قطرہ گِرا ہے آج پھر

Poet: ماہا سہیل By: ماہا سہیل, Lahore

بارش کا قطرہ گرا ہے آج پھر
یادوں کا پنّہ کھلا ہے آج پھر

لگتا ہے پھر آزمایہ گیا ہے مجھے
لگتا ہے پھر ذہن میں لایا گیا ہے مجھے

وہ دھول بھی ہٹی ہوگی ہولے ہولے
وہ رات بھی ڈھلی ہوگی ہولے ہولے

کچھ تو موسم بھی سہانہ ہوگا
کچھ تو انداز بھی دلفریب ہوگا

یوں تو نہیں نگاہِ خاص ہوں گے
کچھ تو لمہے دل کے قریب ہوں گے

سنو! بارش کا قطرہ گرا ہے آج پھر
سنو! یادوں کا پنٌہ کھلا ہے آج پھر

Rate it:
Views: 66
23 Sep, 2022
Related Tags on Sad Poetry
Load More Tags
More Sad Poetry
Popular Poetries
View More Poetries
Famous Poets
View More Poets