مسلمان بزرگ کی حمایت پرسوارا بھاسکر اوردیگرکیخلاف شکایت درج

تصویر: سوارا بھاسکر/انسٹاگرام

بالی ووڈ اداکارہ سوارا بھاسکر ، صحافی ارفع خانم شیروانی ، آصف خان اور ٹوئٹرانڈیا کے سربراہ منیش ۔مہیشوری کے خلاف تشدد کا شکار مسلمان بزرگ کی حمایت کرنے پرشکایت درج کرلی گئی۔

چند روزسے سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل تھی جس میں عبدالصمد سیفی نامی بزرگ مسلمان شخص کا کہن ہے اس کی داڑھی مونڈھ کر تشدد کا نشانہ بنایاگیا اورجے شری رام کا نعرہ لگانے کیلئے کہا گیا۔

سوارا سمیت مقدمے میں نامزد افراد نے مذکورہ بزرگ کی ویڈیو شیئرکرتے ہوئے اس اقدام کی مذمت کی تھی جس پر ایڈووکیٹ امیت اچاریہ نے حقائق جانے بغیرایسا کرنے کے الزام میں دہلی کے تلک مارگ پولیس اسٹیشن میں شکایت درج کروائی جس پر ایف آئی آر کا اندراج باقی ہے تاہم پولیس نے تحقیقات کا آغازکردیا ہے۔

ایف آئی آرکے متن کے مطابق تمام لوگوں نے حقائق کی تصدیق کیے بغیر، امن وامان میں خلل ڈالنے اورمذہبی گروہوں کے درمیان تفریق پیدا کرنے کے ارادے سے ویڈیوآن لائن شیئر کی۔

ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ حملہ آور بزرگ کو آٹو رکشے میں اغوا کر کے قریبی جنگل میں لے گئے اور اپنے مذہبی نعرے لگوانے کے علاوہ لاٹھیوں اور گھونسوں سے تشدد بھی کیا، مسلمان بزرگ پرپاکستانی ایجنٹ ہونے کا الزام عائد کرتے ہوئے داڑھی بھی کاٹی گئی بعد ازاں بھارتی میڈیا نے کہا کہ عبد الصمد سیفی کومسلمانوں کے ہی ایک گروپ نے تشدد کا شکار بنایا۔

اس معاملے کی ایف آئی آربھارتی ریاست اترپردیش کے شہرغازی آباد کے لونی بارڈر پولیس اسٹیشن میں منگل کی رات درج کروائی گئی تھی۔

سوارا نے اس واقعے پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا تھا کہ میں یقین سے کہہ سکتی ہوں کہ چند مسلمان افراد نے ہی بزرگ شخص کو مارا تھا لیکن زبردستی جے شری رام کا نعرہ لگانے کے لیے کہنا اور ان کی داڑھی مونڈھ دینا، کیا واقعی یہ پوری کہانی ہے؟۔

دوسری جانب غازی آباد پولیس نے معاملے میں کسی بھی قسم کی فرقہ واریت سے انکار کرتے ہوئے کہا ہے کہ تشدد کرنے والے افراد بزرگ کی جانب سے دیے جانے والے ایک تعویز کے کام نہ کرنے کی وجہ سے ںاخوش تھے جو انہیں رقم لیکردیا گیا تھا۔

غازی آباد (دیہی) پولیس سپرنٹنڈنٹ ایراس راجہ نے بتایا کہ بزرگ شخص پر حملہ کرنے کے الزام میں 3 افراد کلو گجر، پرویش گجر اور عادل کو گرفتار کرلیاگیا ہے۔


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.

311