مسلم عصبیت کی بنا پر امریکی صدارتی انتخاب میں ناروا سلوک کیا گیا

image
سابق امریکی صدارتی امیدوار ہیلری کلنٹن کے عملے کی مسلم سربراہ ہما عابدین نے انکشاف کیا ہے کہ 2016ء کے صدارتی انتخاب کے دنوں میں بعض سیاستدانوں کی طرف سے مسلمانوں کو خوفناک کردار کے طور پر پیش کیا گیا۔

ہما عابدین نے عرب نیوز کو بتایا کہ اُنہوں نے 2012ء میں ریپبلکن پارٹی کے ایک عہدیدار کی جانب سے اِن مطالبات کا بھی سامنا کیا جن میں کہا گیا تھا کہ تحقیقات کی جائیں کیونکہ وہ اور ان کے خاندان والے مسلمان ہیں جبکہ اس متعصبانہ طرزعمل نے 2016ء کے انتخابات کے موقع پر بہت شدت اختیار کرلی۔

2016ء میں ڈیموکریٹک پارٹی کی امیدوار ہیلری کلنٹن کو سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے مقابلے میں شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

امریکی سیاست میں اپنے تجربے اور سعودی عرب میں اپنا بچپن گزارنے سے متعلق حال ہی میں ہما عابدین کی کتاب شائع ہوئی ہے۔ اِسی حوالے سے وہ عالمی پالیسی سازوں کے انٹرویو کی سیریز ’’فرینکلی اسپیکنگ‘‘ میں اپنے خیالات کا اظہار کر رہی تھیں۔

اِس انٹرویو میں اُنہوں نے امریکی سیاست اور معاشرے میں بڑھتی ہوئی تقسیم، امریکی نظام میں خواتین کے اختیار اور نیویارک کے سابق رکن کانگریس انتھونی وینر سے اپنی شادی کے بارے میں بھی گفتگو کی۔

گزشتہ برس شائع ہونے والی ان کی کتاب کا عنوان ’’بوتھ اینڈ، اے لائف اینڈ مینی ورلڈز‘‘ ہے جس میں امریکا میں مسلم مخالف سوچ اور ملک کے سیاسی نظام کو موضوع بحث بنایا گیا ہے۔

عابدین کہتی ہیں کہ کتاب لکھنے کی ایک وجہ یہ ہے کہ وہ امریکیوں اور دیگر لوگوں کو بتانا چاہتی ہیں کہ مسلمان امریکی ہونے کا کیا مطلب ہے اور یہی وجہ ہے کہ اُنہوں نے اپنے اہلِ خانہ پر 2012ء میں، جب وہ امریکی وزارت خارجہ میں کام کر رہی تھیں، لگنے والے الزامات کے بارے میں تفصیل سے بات کی ہے۔

1996ء میں وائٹ ہاؤس میں انٹرن کے طور پر اپنے سیاسی کریئر کا آغاز کرنے والی ہما عابدین کا کہنا تھا کہ اُن کو صرف اس لیے نشانہ بنایا گیا کیونکہ وہ اور ان کے والدین مسلمان ہیں۔

اگرچہ اِن الزامات کی وزارت خارجہ کی جانب سے تردید کر دی گئی تھی تاہم ہما عابدین کا ماننا ہے کہ ایسا اُنہوں نے امریکی سیاسی نظام میں موجود خرابیوں کی نشاندہی کے لیے کیا۔

Square Adsence 300X250

News Source   News Source Text

WATCH LIVE NEWS

مزید خبریں
عالمی خبریں
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.