روس جنگ زدہ علاقوں میں ادویات کی رسائی روک رہا ہے: یوکرین کا الزام

image
یوکرین کے وزیر صحت نے روسی حکام پر الزام عائد کیا ہے کہ وہ یوکرین کے جنگ زدہ علاقوں میں سستی ادویات کی رسائی روک کر انسانیت کے خلاف جرم کا ارتکاب کر رہا ہے۔

امریکی خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس نے یوکرین کے وزیر صحت وکٹر لیاشکو کے حوالے سے خبر دی ہے کہ یوکرین نے ان علاقوں میں ادویات کی رسائی روکی جا رہی ہے جہاں روسی افواج کا قبضہ ہے۔

ایسوسی ایٹڈ پریس کو انٹرویو دیتے ہوئے جمعے کو یوکرین کے وزیر صحت وکٹر لیاشکو نے کہا  ہے کہ روسی حکام نے مقبوضہ شہروں، قصبوں اور دیہاتوں میں لوگوں کو سرکاری امدادی ادویات فراہم کرنے  کے عمل کو بار بار روکا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ’پورے چھ ماہ کی جنگ کے دوران، روس نے انسانی راہداریوں کی اجازت نہیں دی کہ ہم ان مریضوں تک اپنی ادویات پہنچا سکیں جنہیں ان کی ضرورت ہے۔‘

وزیر صحت نے مزید کہا کہ ’ہمیں یقین ہے کہ یہ کارروائیاں روس کی جانب سے جان بوجھ کر  کی جا رہی ہیں اور ہم ان کو انسانیت کے خلاف جرائم اور جنگی جرائم سمجھتے ہیں جن کا ریکارڈ مرتب کیا جائے گا۔‘

خیال رہے کہ یوکرین کی حکومت کی جانب سے ایک پروگرام کے تحت کینسر اور دائمی امراض میں مبتلا لوگوں کو ادویات فراہم کی جاتی ہیں۔

اقوام متحدہ اور یوکرینی حکام کے مطابق ہسپتالوں اور انفرااسٹرکچر کی تباہی کی وجہ سے ملک کے اندر ایک اندازے کے مطابق 70 لاکھ افراد کے نقل مکانی کرنے وجہ سے علاج معالجے میں مشکلات پیدا ہوئی ہیں۔

رواں برس فروری سے یوکرین میں جاری جنگ نے صحت عامہ کے سرکاری نظام کو بھی شدید متاثر کیا ہے۔

یوکرین کی حکومت کی جانب سے ایک پروگرام کے تحت کینسر اور دائمی امراض میں مبتلا لوگوں کو ادویات فراہم کی جاتی ہیں (فائل فوٹو: اے ایف پی)

عالمی ادارہ صحت(ڈبلیو ایچ او) نے کہا کہ اس نے11 اگست تک ہسپتالوں اور صحت کی دیگر سہولیات پر 445 حملے ریکارڈ کیے جن کے نتیجے میں 86 افراد ہلاک اور 105 زخمی ہوئے۔

لیکن یوکرین کے وزیر صحت وکٹر لیاشکو نے کہا کہ اس جنگ کے ثانوی اثرات کہیں زیادہ شدید ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ ’یوکرینی افواج کے زیر کنٹرول علاقوں میں سڑکیں اور پل تباہ ہو گئے ہیں۔ ان حالات میں ایسے کسی بھی شہری کو ہسپتال پہنچانا مشکل ہے جسے دل کا دورہ پڑا ہو یا اس پر فالج نے حملہ کیا ہو۔‘

’بعض اوقات ہم مریض یا متاثرہ شخص تک بروقت نہیں پہنچ پاتے۔ یہی وجہ ہے کہ جنگ بہت زیادہ ہلاکتوں کا سبب بنی ہے۔‘


News Source   News Source Text

مزید خبریں
عالمی خبریں
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.