آرائش بزم آدم پر حوروں کے نام

Poet: یاسر
By: Yasir naeem, Wazirabad

آرائش بزم آدم پر حوروں کے نام
تجدید جام ھنر ساقی کے دوروں کے نام

یہ جو رگ و جاں میں ہے قیامت برپا
اک قطرے سے اُٹھتے ھوئے اُن بھنوروں کے نام

دست قاتل سے جو والھانہ سلام آتے ہیں
منصف نے کیے ہیں بس سزاور چوروں کے نام

کیوں تم نے سُن کر جدائی میرا مقدر کردی
وہ خط جو آُوروں نے لکھے تھے اوروں کے نام

کیوں نہ میں اپنے جذبوں کی تعمیر میں لکھدوں
طوفان میں کھڑے ھووے گھروں کے نام

میں نے لکھے تو مجھ پر جھنم خرام ہوئی یَاسّرً
کربلا میں کٹے ہووے سَرّوُں کے نام

Rate it:
09 Sep, 2020

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Yasir naeem
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City