ابھی کچھ باقی ہی سہی

Poet: Ameer usman
By: Ameer usman, علی پور چھٹہ

ابھی کچھ باقی ہی سہی
چھپی بے تابی ہی سہی

درس سے نوازا مجھ کو
درس گر پاپی ہی سہی

رحمان ضیمر دیکھتا ہے
نشہ مصر حافی ہی سہی

ہاں تو ناٸب خدا ہے انساں
حکم تو عطاٸی ہی سہی

ستر کا مطلب بے شمار ہے
ہاۓ میں داغی ہی سہی

فانی ہے دنیا اور میں
اس سے باغی ہی سہی

اور تو خیرات کیا کر بس
ہاں وہ حجابی ہی سہی

عمر کو فکر کے حوالے کر
بچی جو باقی ہی سہی

مجھ کو خاک سے محبت ہے
ہاں ہم خاکی ہی سہی

Rate it:
06 Jan, 2020

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Ameer usman
Visit 11 Other Poetries by Ameer usman »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City