اداس لمحوں کا منظر

Poet: ماہم طاہر
By: Maham Tahir, Karachi

اندھیری رات تھی آ نکھیں اداس تھیں
مسافر جاگ چکا تھا پر راہیں اداس تھیں

وہ بھنور ایک دن ہماری تقدیر میں بھی اتر آ یا
اس کی تباہکاریوں کی وہ یادیں اداس تھیں

موسم بہار میں جب بلبل مطلوب نہ ہو سکی
گلاب کو لگتیں تمام شاخیں اداس تھیں

درد اپنے آ خری مراحل طے کر نے لگا جب
الوداع کہتے ہوئے اسے وہاں کی فضائیں اداس تھیں

نہ کوئی خواب تھا یہ نہ حقیقت تصور میں تھی
ورق میں لکھیں تمام باتیں اداس تھیں

Rate it:
25 Feb, 2020

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Maham Tahir
Visit 13 Other Poetries by Maham Tahir »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City