اپنے لیے تو جیتے ھیں سبھی انسان یہاں

Poet: shamim fatima
By: shamim fatima, Islamabad

اپنے لیے تو جیتے ھیں سبھی انسان یہاں
اوروں کے لیے کوئ جیے بات تو تب ہے

اپنوں پے تو سبھی کرتے ھیں جان نثار
غیروں کا کرے کوی خیال بات تو تب ہے

منزل پانے کی جستجو میں تو سبھی ھیں یہاں
پھر اس راہ میں رستہ بھلائ کا چنے بات تو تب ہے

ان بلند و بالا عمارتوں کے بیچ ان نفرتوں اان حقارتوں کے بیچ
دل کسی کا کسی سے جڑے بات تو تب ہے

کسی کی جان لینا تو معنی نہیں رکھتا میرے عزیز
کرے کوی اپنی جان قربان بات تو تب ہے

درد دل تو رکھتے ہیں سبھی جہاں والے
کرے اس درد کی کوی دوا بات تو تب ہے
 

Rate it:
09 Jul, 2020

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: shamim fatima
Visit Other Poetries by shamim fatima »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City