بے تحاشا سی لا ابالی ہنسی

Poet: Basheer Badr
By: TARIQ BALOCH, HUB CHOWKI

بے تحاشا سی لا ابالی ہنسی
چھن گئی ہم سے وہ جیالی ہنسی

لب کھولے ، جسم مسکرانے لگا
پھول کا کھلنا تھا کہ ڈالی ہنسی

مسکرائی خُدا کی مہورت
یا ہماری ہی بے خیالی ہنسی

کون بے درد چھین لیتا ہے
میرے پھولوں کی بھولی بھالی ہنسی

وہ نہیں تھا وہاں کون تھا پھر
سبز پتوں میں کیسے لالی ہنسی

دھوپ میں کھیت گنگنانے لگے
جب کوئی گاؤں کی جیالی ہنسی

ہنس پڑی گاؤں کی اداس فضا
اس طرح چائے کی پیالی ہنسی

میں کہیں جاؤں تعاقب میں
اس کی وہ جان لینے والی ہنسی

Rate it:
09 Dec, 2011

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Tariq Baloch
zindagi bohot mukhtasir hai mohobat ke liye
ise nafrat me mat ganwao.....
.. View More
Visit 1648 Other Poetries by Tariq Baloch »

Reviews & Comments

:گستاخی معاف
تصحیح کر لیا جائے
بے تحاشہ سی لا ابالی ہنسی@

لب "کھلے" جسم مسکرانے لگے*
پھول کا کھلنا تھا کہ ڈالی ہنسی

"مسکرائی خدا کی "محویت*
یا ہماری ہی بے خیالی ہنسی

وہ نہیں تھا وہاں " تو" کون تھا پھر*
سبز پتوں میں کیسے لالی ہنسی

میں کہیں جاؤں" ہے" تعاقب میں*
اس کی وہ جان لینے والی ہنسی

By: Zaman Shams, Bihar on Jul, 02 2020

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City