جانا تمہاری انا نےتمھیں میرے دل و روح کا قاتل بنایا ہے

Poet: H.M. Salman Amin
By: H.M. Salman Amin,

جانا تمہاری انا نےتمھیں میرے دل و روح کا قاتل بنایا ہے
ذرہ دیکھ تو سہی تو نے کچھ بھی تو نہیں پایا ہے

تم نے خود اپنے ہاتھوں ہی اپناخوبصورت گھروندا جلایا ہے
تم نے صبر کو چھوڑ کے صرف گناہ کمایا ہے

کس کام کی تری عبادتیں جب تُجھے کوئی خیال نہیں توبہ کا
تم نے اپنے وجود کو گناہوں کی دلدل میں خود ڈبویا ہے

مانتا ہوں کہ کچھ غلطی میری بھی تھی اس حادثے میں
مگر تم نے تو خدا کی بیاں کردہ تمام حدوں کو گرایا ہے

کہتے ہیں بزرگ لوگ رہتا ہے خدا انسان کے دلوں میں
تم نے تو اپنے پورا ترکش اسی پہ آزمایا ہے

آہ کہ کسی دن ہو تجھے اپنی خطاؤں کا احساس
اور تُو دیکھے ترے ارد گِرد گِدھوں نے گھیرا بنایا ہے

کسی کے جانے سے سفر نہیں رکتا وقت نے مجھے یہی سمجھایا ہے
لگتا ہے اب فی الحال شاید تمہیں خدا حافظ کہنے کا سمے آیا ہے
 

Rate it:
26 Mar, 2020

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: H.M. Salman Amin
Visit 13 Other Poetries by H.M. Salman Amin »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City