رنگ بدلا ہوا ہے چھاؤں کا

Poet: Aisha Baig Aashi
By: Aisha Baig Aashi, karachi

رنگ بدلا ہوا ہے چھاؤں کا
شہرِ دل سوز کی فضاؤں کا

جسم تیروں سے ہو گیا چھلنی
اور کیا ہو صلہ وفاؤں کا

صبر کرنا سکھا دیا مجھ کو
ہو بھلا جبر کے خداؤں کا

کسظرح کھیلتے ہیں موجوں سے
حوصلہ دیکھ ناخداؤں کا

دیکھ وہ آج رُو بہ پستی ہے
جو مسافر تھا ارتقاؤں کا

قرض اتاروں گی کسطرح عاشی
ستم اندیش دیوتاؤں کا

Rate it:
13 Mar, 2013

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: Aisha Baig Aashi

تصور سے نہاں ہوتی نہیں ہُوں
نگاہوں پر عیاں ہوتی نہیں ہُوں

جہاں ہوتی ہُوں واں ہوتی نہیں ہُوں
میں ہوتی ہُوں جہاں ہوتی نہیں ہُوں

فسانوں کو بیاں
.. View More
Visit 78 Other Poetries by Aisha Baig Aashi »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City