شہادت کا مہنگا بہت ہے

Poet: Wasim ahmad Moghal
By: Wasim Ahmad Moghal, Lahore

شہادت کا لہو مہنگا بہت ہے
یہ سب واضح ہے کچھ مبہم نہیں ہے

یہاں پر ہر کوئی وانی ہے وانی
یہاں کوئی کسی سے کم نہیں ہے

شہادت ہی ہے اب منزل ہماری
یہ جذبہ اب کہیں مدھم نہیں ہے

یاں سارے جبر کے ہوتے ہوئے بھی
کسی بچے کا سر بھی خم نہیں ہے

ہمارے جذبے کو کوئی دبا دے
کسی دشمن میں اتنا دم نہیں ہے

یہی دنیا ہمارے ساتھ ہو گی
اگرچہ اب کوئی محرم نہیں ہے

ہمارا شہر ڈوبا ہے لہو میں
ابھی تک یاں کوئی ملزم نہیں ہے

یہاں پر سب فرشتے ہیں فرشتے
یہاں پر کوئی بھی مجرم نہیں ہے
 

Rate it:
04 Dec, 2019

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Wasim Ahmad Moghal
Visit 167 Other Poetries by Wasim Ahmad Moghal »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City