عاصی کی فریاد

Poet: Bint e Iqbal
By: Bint e iqbal, Karachi

زندگی سے کیسی شکایت
لوگوں سے کیسا شکوہ

جو ملا مقدور تھا
نہ ملا تو حزن کیسا

لطف و کرم رب کی بہار
صبر و رضا ہمارا شعار

جن پر انعامات حق ہیں بیشمار
ان کا ہے یہ حسن خیال

بھلے لوگ ہیں ہم خوشحال ہیں
خوشی اور شادمانی سے سرشار ہیں

برے تو بیچارے بدحال ہیں
مصائب اور غم سے نڈھال ہیں

گنہگار ہیں خطاکار ہیں
ہم سے کہاں ان کے اعمال ہیں

سن کر یہ فرمایا سیاہ کار نے
راضی برضانے الہی ہیں ہم

گر رحیم و کریم کے بندے ہو تم
تو جبار و قہار کے بندے ہیں ہم

شکر نعمت گر تمہارا شعار
تو صبر و رضا ہمارا ہتھیار

شکر اور صبر ہیں اچھے شعار
تکبر تو شیطان کا ہے اوزار

پلٹتا ہے تکبر سے میزان حق
کہ بدل جاتی ہے اس سے قسمت خلق

جو اچھے ایام تمہیں ہیں میسر
تو خدمت خلق میں کرو بسر

تکبر , تصنع سے تم بچو
زوال نعمت سے ڈرو

Rate it:
02 Oct, 2018

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Bint e iqbal
Visit 2 Other Poetries by Bint e iqbal »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City