غزل

Poet: اخلاق احمد خان
By: Akhlaq Ahmed Khan, Karachi

سمندر سما کر جس کے ، سینے میں مرگیا
وہ غوطہ زن آج ، سفینے میں مر گیا

جو دیتا رہا عمر بھر اوروں کو ساٸباں
وہ ڈوب کر اپنے ہی ، پسینے میں مر گیا

جو ماہ تنخواہ دار نے عیش میں گزارا تھا
ہاں وہ دہاڑی دار اسی ، مہینے میں مر گیا

زمانے کے رنج الم تو میں ہنس کے سہ گیا
تیرے دیے ہوۓ زخم ، سینے میں مر گیا

اوقات تو نہیں گر ان ﷺ کا کرم ہوا
کیا بعید اخلاق ، مدینے میں مر گیا

Rate it:
13 Aug, 2020

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Akhlaq Ahmed Khan
Visit 119 Other Poetries by Akhlaq Ahmed Khan »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City