قافلے بہار کے کچھ دیر آ کر رک جائیں

Poet: Jamil Hashmi
By: Jamil Hashmi, Rawalpindi

قافلے بہار کے کچھ دیر آ کر رک جائیں
جیسے بھول مسکرا کر رک جائیں

مل جائے اگر جھلک تیرے چہرے کی
تجھے آنکھوں میں چھپا کر رک جائیں

آ ہی گئے ہو تو تھوڑی دیر ٹھہر جائو
آئو کوئی بہانہ بنا کر تھوڑا رک جائیں

کچھ شجر شاید گرنے سے بچ جائیں
اگر تیز ہوا کے جھونکے تھوڑا رک جائیں

Rate it:
02 Feb, 2015

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: Jamil Hashmi
Working in one of reputed Educational Institution.
[email protected]
.. View More
Visit 481 Other Poetries by Jamil Hashmi »

Reviews & Comments

قافلے بہاروں کے آ کر تھوڑا رک جائیں
اور پھول مسکرا کر تھوڑا رک جائیں
مل جائے اگر اک جھلک تیرے چہرے کی
تجھے آنکھوں میں چھپا کر تھوڑا رک جائیں

برائے مہربانی مندرجہ بالا اشعار درست کر کے پڑہیں۔۔۔۔شکریہ
جمیل ہاشمی۔۔۔۔۔

By: Jamil Hashmi, Rawalpindi on Feb, 03 2015

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City