میرے بچو! مرے سائے میں سماؤ، آؤ

Poet: محمد یعقوب آسیؔ
By: محمد یعقوب آسی, ٹیکسلا (پاکستان)۔

میرے بچو! مرے سائے میں سماؤ، آؤ
میں سہاروں گا کڑی دھوپ کا تاؤ، آؤ

صبحِ انوار تو ہے منتظرِ نغمۂ جاں
پھر بلال ایسی اذاں کوئی سناؤ، آؤ

دیکھے بھالے ہیں مرے، دام پرانے سارے
ہمسرو! کوئی نیا جال بچھاؤ، آؤ

بس کہ تیار ہوں میں جاں سے گزر جانے کو
وعدۂ وصل کیا تھا تو نبھاؤ، آؤ

آؤ، یعقوبؔ سے پوچھیں کہ غمِ ہجر ہے کیا
کس طرح درد سے بن جاتے ہیں گھاؤ، آؤ

جاؤ، آسیؔ کو بلا کر کوئی لاؤ، جاؤ
اسے کہنا، کہ وہی نظم سناؤ، آؤ
 

Rate it:
15 Jul, 2020

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: محمد یعقوب آسی
Visit Other Poetries by محمد یعقوب آسی »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City