واعظ یہ کہہ رہا ہے

Poet: Malik Shahzaib Ali Nasir Awan
By: Malik Shahzaib Ali Nasir Awan, Lahore

واعظ یہ کہہ رہا ہے، کہ میکدے کا زوال آیا ہے
واعظ کی بات سن کے، مجھے ساقی کا خیال آیا ہے

وہ جو یار کی آنکھوں سے، جام پیا کرتے تھے
سنا ہے کہ ان کے لئے بھی، حکم قتال آیا ہے

پہلے ہی کیا کم تھا، جو اسکا بانکپن تھا
اس پہ اس جوانی میں، اور بھی جمال آیا ہے

بچ کے نکل نہ جائے، کوئی بھی اس راہ سے
اس لئے حسینوں نے، گیسو کا جال بنایا ہے

اس مہ جبیں سے بچھڑ کے، ناصر جئے گا کیسے
میری زندگی میں اک کٹھن، یہ بھی سوال آیا ہے

Rate it:
29 Dec, 2008

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Malik Shahzaib Ali Nasir Awan
Visit 11 Other Poetries by Malik Shahzaib Ali Nasir Awan »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

great poetry..well...

By: tariq, hattar,haripur on Jul, 08 2011

ماشاءالله ھماری ویب انتہائی مفید اور شاندار ہے۔الله تعالیٰ آپ کی اس پرخلوص کاوش کو اپنی بارگاہ میں قبول ومنظور فرمائے۔اور صحت و سلامتی کے ساتھ آپ کی عزت و توقیر میں مزید اضافہ فرمائے۔آمین،ثم آمین۔

By: RIAZ KAZMI, Rawalpindi on May, 12 2010

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City