کسی مرتد نے پھر کلمہ پڑھا ہے

Poet: Dr Aftabmujahid
By: Dr Aftab Mujahid, Azamgarh

کسی مرتد نے پھر کلمہ پڑھا ہے
زمانہ کشمکش میں مبتلا ہے
جسے سمجھتے تھے اچھا بھلا
وہی کوڑی میں کے بدلے بک گیا
ضمیر انسان کا مردہ ہوگیا ہے
تعصب اس قدر سر پر چڑھاہے
مرے چہرے پہ جانے کیا لکھا ہے
وہ مجھکو احتراماً دیکھتا ہے
ابھی بھی دکشنہ لیتا ہےکوئی
انگوٹھا تھا گلا اب کاٹتا ہے
ہوا سرحد پہ کیسی چل رہی ہے
کوئی کمبخت طعنے دے رہا ہے
ذرا سی چھوٹ پاکر اب مجاہد
وہ کالادھن بھی اجلا کر رہا ہے
 

Rate it:
31 Aug, 2019

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Dr Aftab Mujahid
Visit 6 Other Poetries by Dr Aftab Mujahid »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City