کورونا

Poet: ضیاء الدین احمد
By: Ziauddin Ahmed, Karachi

ہر طرف خوف کا سا ہے عالم چھایا
ساری دنیا میں بس تیرا ہی چرچا پایا
ہو گئے سب دوری پر مجبور
اے کورونا تو جو موت بن کر ہے آیا

تیرا علاج ابھی تک نہ کوئی کرنے پایا
تو ہر بار بہت زور نئے ڈھنگ سے آیا
ڈوب گئی معیشت ساری
اے کورونا تو جو موت بن کر ہے آیا

چھڑی ہے بحث تیری حقیقت کی، تیرا سراغ کوئی لگا نہیں پایا
سب حیران ہیں کہ آخر تو ہے کہاں سے آیا
شکریہ عمران کا کہ جس نے، کیا وہ کام جو مودی بھی نہ کرنے پایا،
خدایا رکھنا سب کو اس کے شر سے محفوظ
اے کورونا تو جو موت بن کر ہے آیا

 

Rate it:
12 Feb, 2021

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: Ziauddin Ahmed
Visit Other Poetries by Ziauddin Ahmed »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>