ہمیں بہاروں سے کیا سروکار ہے

Poet: UA
By: UA, Lahore

ہمیں بہاروں سے کیا سروکار ہے
ہم تو خزاں کی پیداوار ہیں
بہار آتی ہے
آ کے چلی جاتی ہے
پھول کِھلتے ہیں
کِھل کے مرجھا جاتے ہیں
کلیوں کو دیکھ کر
بھنورے منڈلاتے ہیں
تتلیلوں کے پر
پھولوں کے رنگ چراتے ہیں
روپ رنگ نِکھرتے ہیں
بہار کے آنے کی نوید سناتے ہیں
پرندے گیت گاتے ہیں
آمدِ بہار کی خوشی
اہلِ وفا یوں مناتے ہیں
محبت کرنے والے
آمدِ بہار پر
یومِ تجدیدِ وفا مناتے ہیں
پھول دئیے جاتے ہیں
پھول لئے جاتے ہیں
پر ہمیں اِن باتوں سے
کیا سروکار ہے
ہم تو خزاں کی پیداوار ہیں
ہمیں بہاروں سے کیا سروکار ہے

Rate it:
13 Feb, 2020

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: uzma ahmad
sb sy pehly insan phr Musalman and then Pakistani
broad minded, friendly, want living just a normal simple happy and calm life.
tmam dunia mein amn
.. View More
Visit 3206 Other Poetries by uzma ahmad »

Reviews & Comments

محبت کرنے والے
آمدِ بہار پر
یومِ تجدیدِ وفا مناتے ہیں
پھول دئیے جاتے ہیں
پھول لئے جاتے ہیں
آمد بہار کی خوشی
اہلِ وفا یوں مناتے ہیں

By: Uzma, Lahore on Feb, 16 2020

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City