ہوتا جا رہا ہے

Poet: نعمان صدیقی
By: Noman Baqi Siddiqi, Karachi

کیا ہونے دوں ایسا کہ جیسا ہوتا جا رہا ہے
میرا وجود پہچان اپنی کھوتا جا رہا ہے

لا شعور کہتا ہے جو وہ ہو ہی جاتا ہے
شعور کو میرے، یہ کیا ہوتا جا رہا ہے

قریب تھی ہر پل میرے، دور تو اب بھی نہیں
ماضی کو میرے حال سے یوں جوتا جا رہا ہے

ہونٹوں پر سجی ہنسی خوشی پھنسی
دل میرا غمگین ہے بس روتا جا رہا ہے

نیند میری اڑ گئ کسی اور سے وہ جڑ گئ
اسے دیکھو مزے سے کیسے سوتا جارہا ہے

جو بھی چاہو جو بھی کر لو تم نعمان
جو اُسے منظور ہے وہ ہوتا جارہا ہے

Rate it:
11 Sep, 2019

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Noman Baqi Siddiqi
Visit 72 Other Poetries by Noman Baqi Siddiqi »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City