“مٹایا گردش افلاک نے جاہ و حشم میرا“

Poet: Hasan Shamsi
By: F.H.SIDDIQUI, Lucknow (India)

نہ تھا یوں تو زمانے میں کسی سے رتبہ کم میرا
“مٹایا گردش افلاک نے جاہ و حشم میرا“

تھکے قدموں سے گزری ساتھ ساری زندگی اپنی
نہ اس کا ھم قدم میں تھا، نہ وہ تھا ہم قدم میرا

قسم کھائی ہے سہنے کی تمھارا ہر ستم میں نے
قسم اب تم کو جانآں ، آزما لو تم بھی دم میرا

سخن پر میرے بس ان کا ہی غلبہ ہے، اجارہ ہے
تصور میں وہ آتے ہیں تو چلتا ہے قلم میرا

نہیں ہے وہ میرا ، وہ ہرجائی ہے ، مانا ‘حسن‘ لیکن
زمانہ سارا سمجھے ہے اسے اب بھی صنم میرا
( طرحی غزل بر مصرعہ برج نرائن چکبست لکھنوی )

Rate it:
01 Sep, 2015

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: F.H.SIDDIQUI
*Social science teacher and trainer

.. View More
Visit 158 Other Poetries by F.H.SIDDIQUI »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City