عراق: البلاد ائر بیس پر فضائی حملے، امریکہ کو تشویش لاحق

عراق میں بغداد کے شمال میں البلاد ائر بیس  پر دو راکٹ  فائر کئے گئے، جہاں بیس کی حفاظت کے لئَے امریکی فوجیوں کو تعینات کیا گیا تھا۔

 عراقی فورسز کے مطابق یہ تازہ ترین حملے امریکی فوجیوں کی میزبانی کرنے والے ٹھکانوں پر ہوئے ہیں،  جس نے امریکی  فوج کے اہلکاروں  کو خوف زدہ کردیا ہے۔ ایک امریکی اہلکار نے اپنے بیان میں کہا کہ  یہ  حملے اس وقت ہوئے،  جب واشنگٹن اپنے مقابل دشمن ایران کا مقابلہ کرنے کے لئے مشرق وسطی میں 5000 اور 7000 کے درمیان تازہ فوجی تعینات کرنے پر غور کر رہا ہے۔

امریکی  حکام کے مطابق ان حملوں میں کوئی  جانی نقصان نہیں ہوا،   لیکن یہ شبہ ہے کہ ہمارے دشمن ہمارے قریب آ گئے ہیں۔   دوسری طرف واشنگٹن کو عراقی ٹھکانوں پر حالیہ حملوں کی وجہ سے تشویش لاحق ہے جہاں عراقی افواج کی مدد کے لئے تقریبا 5،200 امریکی فوجی تعینات کیے گئے ہیں تاکہ یہ یقینی بنایا جاسکے کہ عسکریت پسندوں کا دوبارہ اتحاد نہیں ہونا ہے۔ یہ  تو یہ  حملے امریکی  بیس  پر  ، یا بغداد میں   امریکی  سفارت خانے کو  تباہ کرنے کے لئے کئے گئے۔

ایک دوسرے امریکی عہدیدار نے کہا ، “راکٹ حملوں میں اضافے کا خدشہ ہے۔” انہوں نے مزید کہا کہ اگرچہ ان سے امریکی جانی و مالی نقصان نہیں ہوا ہے ، لیکن وہ تشویشناک حد تک بڑھ رہے ہیں۔نائب صدر مائیک پینس کے وہاں دورے کے صرف چار دن بعد 3 دسمبر کو اسد ائیربیس پر پانچ راکٹ مارے گئے۔

عراق میں ایرانی قونصل خانےکوآگ لگادیحالیہ مہینوں میں یہ سب سے بڑا حملہ ہے جہاں امریکی فوج مقیم ہیں۔ابھی تک ان حملوں کی ذمہ داری قبول کرنے کا کوئی دعوی نہیں کیا گیا ہے اور واشنگٹن نے کسی خاص دھڑے کو مورد الزام قرار نہیں دیا ہے۔ لیکن امریکی وزیر خارجہ مائک پومپیو نے ایران سے منسلک گروہوں پر اسی طرح کے حملوں کا الزام عائد کیا ہے۔

واضح رہے کہ  گذشتہ ماہ شمالی عراق کے علاقے قیارہ ایئر بیس پر ایک درجن سے زیادہ راکٹ مارے گئے تھے ، اس قبل رواں برس   جون کے مہینے میں عراقی صوبے صلاح الدین کے شہر بَلد میں واقع امریکی ایئر بیس پر نامعلوم افراد نے تین مارٹر گولے  مارے   تھے۔ تاہم  کوئی جانی نقصان نہیں ہوا تھا ۔ ایئر بیس کے اندر گرنے والے گولوں سے وہاں اْگی ہوئی جھاڑیوں میں آگ لگی گئی  تھی ۔

 جس وقت یہ گولے داغے گئے، اْس وقت بیس پر عراقی فوج کو تربیت دینے والے امریکی اہلکار موجود تھے۔  


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.