وکلااورڈاکٹرزکی لڑائی میں ’’فیاض الحسن چوہان ‘‘پِس گئے

لاہورمیں وکلانےپنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی پردھاوابول دیا،اس دوران وکلا نےصوبائی وزیر اطلاعات فیاض الحسن چوہان پرشدید تشددکیا۔

تفصیلات کےمطابق لاہورمیں وکلا نےمبینہ طور پر ینگ ڈاکٹرز کی جانب سے اپنے خلاف ایک ویڈیو وائرل کیے جانے پر پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی پر دھاوا بول دیا جس سے مریضوں اور تیمار داروں میں شدید خوف و ہراس پھیل گیا۔

وکلا نے ایمرجنسی میں توڑ پھوڑ کی، عمارت کے شیشےتوڑدیےجبکہ وکلا آپریشن تھیٹر میں بھی گھس گئے۔

سیکریٹری لاہور بار فیاض رانجھا کا کہنا تھا کہ وکلا کا معاملہ انتظامیہ سے ہے مریضوں کو تنگ نہیں کیا۔ وکلا نے سرکاری املاک کو نقصان پہنچایا ہے تو کارروائی ہوگی۔ سرکاری املاک کو نقصان پہنچانے کا ثبوت ملا تو وکلا کا لائسنس کینسل کریں گے۔

اس دوران صوبائی وزیر صحت یاسمین راشد پی آئی سی پہنچیں تو انہیں اندر داخل نہیں ہونے دیا گیا۔  آدھے  گھنٹے انتظار کے بعد وہ بالآخر اندر داخل ہونے میں کامیاب ہوئیں۔

دوسری جانب وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدارنےوکلا کی ہنگامہ آرائی کا نوٹس لیتے ہوئے سی سی پی او لاہور اور سیکریٹری اسپیشلائزڈ ہیلتھ ایجوکیشن سے رپورٹ طلب کرلی  ہے ۔

وزیراعلیٰ نےواقعےکی تحقیقات کاحکم دیتےہوئےکہاکہ ہنگامہ آرائی کےذمہ داروں کےخلاف قانون کے تحت کارروائی کی جائے، کوئی قانون سے بالاتر نہیں۔ دل کے اسپتال میں ایسا واقعہ ناقابل برداشت ہے۔

ہنگامہ آرائی کےکئی گھنٹوں بعدپولیس کوہوش آیاتوپولیس کی جانب سےوکلا پرلاٹھی چارج اورشیلنگ کی گئی تاہم اس دوران پی آئی سی میں وکلا کی جانب سےہوائی فائرنگ کی اطلاعات بھی آئیں۔

وکلا کی ہوائی فائرنگ کےبعدپولیس پیچھےہٹنےپرمجبورہوگئی،وکلا نےپولیس موبائل بھی توڑدی۔

پنجاب انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی کے آس پاس موجود مارکیٹ کو بند کروا دیا گیا ہے اور رینجرز کی نفری بھی جائے وقوعہ پر پہنچ گئی ہے۔

اس دوران صوبائی وزیر اطلاعات فیاض الحسن چوہان وہاں پہنچےتووکلا نےانہیں گھیرلیااوران پرشدید تشدد کیا۔ وزیر اطلاعات پولیس کو مدد کے لیے بلاتے رہے۔

صوبائی وزیر اطلاعات نے الزام عائد کیا ہے کہ انہیں اغوا کرنے کی کوشش کی گئی، آج انصاف پسند وکلاء بہت رنجیدہ اور دکھی ہوں گے۔

فیاض چوہان کا کہنا تھا بیچ بچاؤ کرنے آیا تھا لیکن وکلاء کی جانب سے تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔

ان کا کہنا تھا کسی سے ڈرنے والا نہیں ہوں، توڑ پھوڑ کرنے والے وکلاء کے خلاف تادیبی کارروائی ہو گی۔


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.