آسمان میں لکیریں کیوں بنتی ہیں ؟

image

اکثر آپ نے دیکھا ہوگا کہ آسمان میں 2 یا اس سے زائد لکیریں بنی ہوئی نظر آتی ہیں جو کہ کچھ ہی دیر میں تحلیل ہونا شروع ہوجاتی ہیں۔

ان لکیریوں کے بننے اور کچھ ہی دیر میں تحلیل ہونے کی اصل وجہ کیا ہے اور ایسا کیوں ہوتا ہے اس حوالے سے آج اس آرٹیکل میں بات کریں گے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ لکیریں کسی راکٹ کی وجہ سے نہیں بنتی ہیں بلکہ یہ طیاروں کی پرواز کے دوران بنتی ہیں۔

ماہرین کے مطابق یہ عمل ویئپر ٹریلز کہلاتا ہے جو کہ ایوی ایشن فیول جلنے کا نتیجہ ہوتا ہے ۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ جب ایوی ایشن فیول جلتا ہے تو اس کے نتیجے میں کاربن ڈائی آکسائیڈ اور پانی بنتا ہے جو کہ ننھے قطروں کی صورت میں نکلتا ہے۔

ماہرین نے بتایا ہے کہ آسمان میں یہ لکیریں بننا  طیارے کی پرواز اور اونچائی پر مبنی ہوتا ہے کہ یہ کتنی موٹی اور پتلی ہوتی ہیں۔

اگر لکیر پتلی ہے اور جلدی تحلیل ہوجاتی ہے تو طیارہ کافی بلندی پر موجود ہے جبکہ لکیروں کی موٹائی اور دیر تک  آسمان پر رہنا مطلب ہوا میں نمی کی موجودگی ہوتا ہے۔

Square Adsence 300X250


News Source   News Source Text

WATCH LIVE NEWS

مزید خبریں
سائنس اور ٹیکنالوجی
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.