برفانی تودہ پگھلنے سے 152 ارب ٹن میٹھا پانی سمندر میں شامل

image
برطانوی شہر لندن سے جسامت میں تین گنا بڑا برفانی تودا پگھل کر سمندر میں شامل، 152 ارب ٹن میٹھا پانی سمندر برد ہوگیا۔

اس بات کا انکشاف برطانیہ کے انٹارکٹک سروے اور مرکز برائے پولر آبزرویشن اینڈ موڈلنگ کی جانب سے ہونے والی تحقیق کے بعد ہوا۔

اس تحقیق میں سائنس دانوں نے زمین کے مدار میں موجود 5 سیٹلائٹس کی مدد سے لندن سے ساڑھے تین گنا بڑے A68A کے نام سے جانے والے بر فانی تودے کو ٹریک کیا۔

سیٹلائیٹس سے حاصل ہونے والی معلومات سےسائنس دانوں کو یہ جاننے میں مدد ملی کہ A68A نے کب پگھلنا شروع کیا اور اس کا اختتام کب ہوا۔

اس بابت ریسرچرز کا کہنا ہے کہ اس آئس برگ کی آخری بڑی سل سے گزشتہ سال جنوبی جارجیا کے قریب تازہ پانی خارج ہوکر سمندر میں مل گیا۔

محققین کے مطابق اس آئس برگ کے پگھلنے سے سمندر میں شامل ہونے والے میٹھے پانی سے اولپمک سائز کے 61 ملین سوئمنگ پولز کو بھرا جاسکتا تھا۔

تحقیق سے یہ بات بھی سامنے آئی کہ اس کے پگھلنے کاعمل اس وقت شروع ہوا جب یہ جنوبی جارجیا کے سب انٹارکٹک جزیدے میں داخل ہوا اورصرف 2020 اور 2021 کے تین ماہ میں یہ مکمل طور پر پگھل کر سمندر میں شامل ہوگیا۔

اس برفانے تودے کا سفر جولائی 2017 میں اس وقت شروع ہوا تھا جب یہ 2500 میل رقبے پر محیط انٹارکٹک پینی سولا سے ٹوٹ کر الگ ہوا۔ اس وقت اسے زمین پر دنیا کا سب سے بڑا آئس برگ قرار دیا گیا تھا۔

Square Adsence 300X250

News Source   News Source Text

WATCH LIVE NEWS

مزید خبریں
سائنس اور ٹیکنالوجی
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.