انڈین ریاست کیرالہ میں بچے کے نفرت پر مبنی مذہبی نعرے، ایک شخص گرفتار

image

انڈین ریاست کیرالہ میں ایک بچے کی جانب سے نفرت انگیز مذہبی نعرے لگانے پر مقدمہ درج کر کے ایک شخص کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔

انڈین چینل ’این ڈی ٹی وی‘ کے مطابق گذشتہ چند دنوں سے سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہوئی ہے جس میں ایک شخص کے کندھے پر بیٹھے بچے کی جانب سے ہندوؤں اور مسیحی برادری کے خلاف نعرے لگائے گئے۔

گرفتار کیے گئے شخص پر الزام ہے کہ وہ کم عمر بچے کو سیاسی ریلی میں ساتھ لایا اور اس سے نعرے بھی لگوائے۔

سوشل میڈیا اور انڈین ذرائع ابلاغ پر چلنے والی اطلاعات کے مطابق بچے کی جانب سے نعرے کیرالہ میں ’پاپولر فرنٹ آف انڈیا‘ کے ایک جلسے میں لگائے گئے۔

اس ویڈیو کے وائرل ہونے بعد کیرالہ ہائی کورٹ نے بھی سیاسی جلسوں میں بچوں کے استعمال ہر تشویش کا اظہار کیا تھا۔

پیر کو ایک مقدمہ کی سماعت کے دوران کیرالہ ہائی کورٹ کے جج جسٹس گوپی ناتھ کا کہنا تھا کہ ’یہ نعرے نئی نسل کے ذہنوں میں مذہبی نفرت بٹھانے کے مترادف ہے۔‘9

پولیس کی جانب سے ’پاپولر فرنٹ آف انڈیا‘ کے عہدیداروں کے خلاف بھی مقدمات قائم کیے ہیں۔

انڈین نیوز ایجنسی ’پی ٹی آئی‘ کے مطابق ’پاپولر فرنٹ آف انڈیا‘ نے نفرت انگیز نعروں سے لاعلمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’یہ نعرہ ہمارے نعروں میں شامل نہیں۔ ہمارے جلسے میں مختلف علاقوں سے کارکنان آئے تھے اور جب کارکنان نے یہ نعرہ سنا تو اسے روکنے کی کوشش کی۔‘

اس حوالے سے انڈین کانگریس کے لیڈر ششی تھرور نے ایک ٹویٹ میں لکھا کہ ’اس تقریب کی ویڈیو اور میڈیا پر چلنے والی اطلاعات سے پورا کیرالہ شاک میں ہے۔‘

انہوں نے مزید لکھا کہ ’فرقہ واریت کی مخالفت کرنے کا مطلب یہ ہے کہ ہر طرف کی فرقہ واریت کو مخالفت کی جائے۔‘


News Source   News Source Text

WATCH LIVE NEWS

مزید خبریں
عالمی خبریں
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.