آنکھ میں ماہ وسال

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: washma khan washma, Karachi

آنکھ میں ماہ و سال رکھے ہیں
درج سب کے ملال رکھے ہیں

تیری خدمت میں پیش کرنے کو
چار آنسو سنبھال رکھے ہیں

ایک کا بھی جواب دے نہ سکے
اس نے درجن سوال رکھے ہیں

ہم نے خود کو تباہ کر ڈالا
صرف تیرے خیال رکھے ہیں

آج اپنی بیاض میں لکھ کر
بیقراروں کے حال رکھے ہیں

رائیگاں سارے دیکھو اے وشمہ
روگ سینے میں پال رکھے ہیں

Rate it:
03 Nov, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4549 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City